52

امریکی صدر کی حلف برداری، بائیڈن واشنگٹن پہنچ گئے

امریکا کے نو منتخب صدر کی حلف برداری کا لمحہ آ گیا، جو بائیڈن اور نو منتخب نائب صدر کملا ہیرئس واشنگٹن پہنچ گئے۔

نو منتخب امریکی صدر جو بائیڈن نے کورونا وائرس سے ہلاک ہونے والے 4 لاکھ امریکیوں کی یادگاری تقریب میں شرکت کرتے ہوئے کہا کہ زخموں کو مندمل کرنے کے لیے ہمیں ان افراد کو یاد رکھنا ہوگا جو وباء کا شکار ہوئے۔

انہوں نے کہا کہ یہ عمل بعض اوقات تلخ ہوتا ہے مگر اسی طرح ہم زخموں کو مندمل کر سکتے ہیں۔
جو بائیڈن نے یہ بھی کہا کہ غروبِ آفتاب سے طلوعِ صبح تک لائٹیں روشن کر کے ان تمام لوگوں کو یاد کریں جنہیں ہم نے کھو دیا۔

اس موقع پر کورونا وائرس سے ہلاک افراد کی یاد میں نیویارک کی اہم عمارتوں پر سرخ لائٹیں بھی روشن کی گئیں۔

نومنتخب امریکی صدر جو بائیڈن کی حلف برداری پاکستانی وقت کے مطابق آج شب ساڑھے 9 بجے ہو گی جس کے بعد وہ قوم سے خطاب کریں گے-نو منتخب صدر مختلف شعبوں میں آج اہم اقدامات کااعلان کریں گے، تارکینِ وطن کے لیے 8 سالہ امریکی شہریت کے بل کا اعلان کیا جائے گا، ایک کروڑ 10 لاکھ افراد کو بغیر کسی قانونی حیثیت کے شہریت دیئے جانے کا امکان ہے۔

حلف برداری کے لیے واشنگٹن ڈی سی میں سیکیورٹی سخت کر دی گئی ہے، 25 ہزار نیشنل گارڈز تعینات کیئے گئے ہیں جبکہ سیکیورٹی اہلکاروں کی اسکریننگ کے دوران 12 سیکیورٹی اہلکاروں کو ہٹا دیا گیا جن میں سے 2 پر دائیں بازو کے انتہا پسندوں سے تعلق کا الزام ہے۔

حلف برداری سے 1 روز پہلے ریپبلکن سینیٹر مچ مکونل نے بھی کیپیٹل ہل حملے کا ذمے دار سبکدوش صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو قرار دے دیا اور کہا ہے کہ ان کے مواخذے پر غورکیا جا رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں