13

جاپان بھی عالمی سطح کی مہنگائی کی لپیٹ میں

عالمی کساد بازاری، تیل کی بڑھتی قیمتوں اور روس اور یوکرین جنگ کے سبب ہونے والی عالمی سطح کی مہنگائی نے جاپان کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا۔

پیٹرول بھی ڈھائی سو پاکستانی روپے تک جا پہنچا، جبکہ سبزیاں، گوشت، انڈے، ڈبل روٹی، پھل سمیت کئی روز مرہ کی کھانے پینے کی اشیا مہنگی ہوگئیں۔

جاپانی عوام بھی مہنگائی سے بلبلا اٹھے، جاپانی حکومت نے عوام پر پڑنے والا مہنگائی کا بوجھ کم کرنے کے لیے اقدامات شروع کردیے۔

80 ارب ڈالر سے زائد کی رقم ملک کی معیشت اور مہنگائی کا بوجھ کم کرنے کے لیے مختص کردیے جبکہ جاپانی وزیراعظم نے مہنگائی کو کم رکھنے کے لیے کابینہ کا اجلاس طلب کرلیا۔

واضح رہے اگلے چند دنوں میں جاپانی حکومت بجلی کی قیمت میں بھی اضافہ کرنے والی ہے جس کے لیے بھی نئی اسکیم متعارف کروائی جارہی ہے جس کے تحت کم بجلی استعمال کرنے والے گھرانوں کو سبسڈی دی جائیگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں