6

روٹی قیمت میں 10روپے اضافے کا اعلان

گندم اور آٹے کی قیمتوں میں اضافے کے بعد راولپنڈی میں نان بائیوں کی جانب سے روٹی کی قیمت میں 10 روپے اضافے کا اعلان کر دیا گیا۔
فلور ملز کو گندم کی سپلائی میں کمی اور امدادی قیمت میں اضافہ کے باعث گندم کا بحران شدت اختیار کرنے لگا ہے جبکہ پنجاب حکومت نے گندم کی سرکاری قیمت بڑھا کر3ہزار روپے کر دی۔
آٹا کی قیمت میں بے پناہ اضافہ سے نان بائیوں نے روٹی، نان اور پراٹھہ کی قیمت میں 10، 10 روپے اضافہ کا اعلان کر دیا ہے۔
نان بائی ایسوسی ایشن کے صدر شفیق قریشی نے بتایا کے سرخ آٹے کی پتیری روٹی کی قیمت 12 روپے سے بڑھا کر20 روپے، سفید فائن آٹے کی خمیری روٹی قیمت 20روپے سے بڑھا کر30 روپے، تل والے نان کی قیمت 35 روپے جبکی تندوری پراٹھہ اور روغنی نان کی قیمت 50 روپے کر دی گئی ہے۔
نان بائی ایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ انہیں سرخ آٹے کی بوری 7ہزار روپے اور میدہ، فائن آٹے کی 80 کلو کی بوری 9500 روپے میں فروخت کی جا رہی ہے۔
فلور ملز کا موقف ہے کہ فلور ملز کو کوٹہ کے مطابق سرکاری گندم سپلائی نہیں ہو رہی مارکیٹ میں گندم 3600 روپے من فروخت ہونے لگی ہے جس سے آٹے کی قیمت بھی بڑھ گئی ہے۔
شہر بھر میں 10 کلو آٹے کا تھیلہ 600روپے، 20 کلو آٹے کا تھیلہ 1300 روپے میں دستیاب ہے اور فائن آٹا کا تھیلہ 1600روپے میں فروخت ہونے لگا ہے جبکہ ضلع بھر کے 4055 آٹا چکی مالکان نے آٹے کی قیمت بڑھا کر 125 روپے فی کلو کر دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں