40

طلبا کی جسمانی اور زہنی تندرستی ہی ان کے مخفوظ مستقبل کی ضمانت ہے-صوبائی وزیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس

صوبائی وزیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس کی سکول مینٹل ہیلتھ پروگرام کے حوالے منعقدہ اجلاس میں آن لائن شرکت،ڈاکٹر مراد راس کہتے ہیں طلبا کی جسمانی اور زہنی تندرستی ہی ان کے مخفوظ مستقبل کی ضمانت ہے۔

تفصیلات کےمطابق آن لائن پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر تعلیم ڈاکٹر مراد راس نے کہا کہ آج تک کسی بھی حکومت کی جانب سے طلبا کی ذہنی تندرستی و توانائی کے لئے کوئی کام نہیں کیا گیا، گزشتہ سال کے دوران کورونا وبا کی بدولت بھی طلبا ذہنی تناو کا شکار ہوئے ہیں، ڈاکٹر مراد راس نے کہا کہ سکول مینٹل ہیلتھ پروگرام کو پائلٹ پراجیکٹ کی کامیابی کے بعد دیگر اضلاع میں بھی لے جایا جائے گا، سکول مینٹل ہیلتھ پروگرام کے کامیاب انعقاد اور عملدرآمد کے لئے صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی، ڈاکٹر ظفر مرزا و دیگر کے شکر گزار ہیں۔
گزشتہ دنوں پی سی ہوٹل میں سر سید تعلیم کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےصوبائی وزیر تعلیم ڈاکٹر مراد راس کا کہنا تھا یکساں نظام تعلیم پر پنجاب کے 70 فیصد پرائیویٹ سکول متفق ہیں،نجی اور سرکاری سکولوں کے اساتذہ کو تربیت دے رہے ہیں، چار لاکھ اساتذہ کو یکساں نصاب پر تربیت دی جارہی ہے، پچاس فیصد ٹرینر نجی سکولوں سے لائے ہیں، نجی سکولوں کے ٹرنیرز نے یکساں نصاب کو بہترین قرار دیا ہے۔
صوبائی وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ پچھلے دس سالوں میں نجی سیکٹر کو پروان چڑھایا گیا،سرکاری سکولوں کو دبایا گیا، مالی فوائد کی وجہ سے نجی سکولوں کو فائدہ دیا گیا،سابقہ حکومت نے ایجوکیشن میں بھی جدید ٹیکنالوجی استعمال نہیں کی، مجھے جوائن کرنے پر پتہ چلا کہ میں تو ٹرانسفر منسٹر ہوں، ہمارے اساتذہ کو ٹرانسفر پروموشن اور اے سی آر میں پھنسایا ہوا تھا۔

صوبائی وزیر تعلیم کا کہناتھا کہ ہم اساتذہ کو تمام چیزوں سے آزاد کرنے جا رہے ہیں، اساتذہ کا کام پڑھانا ہے اور وہ صرف پڑھائیں گے، جدید ٹیکنالوجی سے کرپشن ختم ہو گی، سابقہ ادوار میں حکومتوں میں آنے والوں نے صرف اپنے بارے میں سوچا کہ ہمارے پاس کیا آ رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں