26

عام شخص کا پیشنتس ایڈ فاؤنڈیشن (PAF)، JPMC کی مدد سے بہادری کے ساتھ خطرنا ک مہلک بیماری کا مقابلہ

(ٹیوٹرپاکستان) کراچی کا 61سالہ رہائشی حفیظ الدین ولد حکیم الدین چھ بچوں، تین بیٹوں اور تین بیٹیوں کا باپ ہے جس کے سر پر بھاری ذمہ داریاں ہیں۔وہ ایک چھوٹی سی فیکٹر ی میں جوتے پالش کرنے کا کام کرتا تھا اور ہفتہ میں 3,000ہزار روپے یعنی 12,000روپے ماہانہ کماتا تھا اس کی گزربسر بہت مشکل سے ہوتی تھی تاہم 2019میں اس کے حالات مزید خراب ہوگئے جب حفیظ الدین بیمار رہنے لگا۔ اس بیماری کی علامات میں بخار، راتوں کو پسینے، نامعلوم وجوہات پر وزن میں کمی اور تھکن شامل تھیں۔اس نے کئی دفعہ بیوی سے سانس لینے میں تکلیف اور گردن میں شدید درد کابھی ذکرکیا۔ گرتی ہوئی صحت کے سبب اس کونوکری سے بھی ہاتھ دھونا پڑے جس سے گھریلو حالات ابتر ہوگئے۔ اس موقع پر اس کے گھر والوں کو اس کی بگڑتی ہوئی صحت کے بارے میں سخت تشویش ہونے لگی او ر ان کو خوف محسوس ہونے لگا کہ کل کیاہوگا۔

ذہن میں اس تشویش کے آنے پر اس کی بیوی اس کو JPMCلے گئی جہاں اس کی باءؤپسی کی گئی اورB-Cell non-Hodgkin’s lymphoma تشخیص کیا گیا اور ڈاکٹر نے اسے کینسر کے ابتدائی علاج کے آغاز کیلئے PET-CT کی ہدایت کی۔

Positron Emission Tomography – Computed Tomography (PET-CT) کو ریڈیو ایکٹیو میٹریلز اور خصوصی کیمرے کے ساتھ cellular لیول پر عضو اور ٹشوکے کام کرنے کی جانچ کی جاتی ہے۔PET-CT نے خصوصی 3Dویوز کے ذریعہ نتائج کی بہتر درستی کا اضافہ کرکے طبی تشخیص میں انقلاب برپا کردیا ہے جس کی روایتیimaging PET کی کمی تھی۔ PET-CT سکین کا ہرسیشن 30منٹ دورانیے کا ہوتا ہے اورکراچی میں اس کے اخراجات 70,000 سے 90,000روپے تک ہوتے ہیں۔حفیظ الدین کوPET-CTسکین کے ہرسیشن کیلئے 75,000روپے بتائے گئے۔

ایسی صورتحال میں حفیظ الدین کام کرنے کے قابل نہیں تھا اور اس کیلئے تو گھرچلانے کے اخراجات بھی نہیں تھے۔ اس کی بیوی نے گھر کے خرچہ کا انتظام کرنے کیلئے سلائی کرنا شروع کردی اور مشکل سے 5,000روپے ماہانہ کمانے گی لیکن جلد ہی اسے یہ کام بھی ختم کرنا پڑا کیونکہ اس کی آنکھیں بری طرح متاثر ہوگئی تھیں۔ پھر اس نے لوگوں کے گھر وں میں کھانا پکانا شروع کیا اور تھوڑا بہت کمانے لگی۔ اس موقعے پر اس کے بیٹے آگے آئے اور انہوں نے اسی جوتے پالش کرنے والی فیکٹری میں کام شروع کردیا۔ اس کی بچیوں نے گھر کے اخراجات میں مدد کیلئے سلائی کرنے اور مہندی لگانے کا سلسلہ شروع کردیا۔ اس سب کے باوجود اس کی فیملی کی ماہانہ آمدنی صرف 19,000روپے تک پہنچی۔
۔ ۲ ۔
اس کی فیملی بہت زیادہ فکرمند اور مایوس ہوگئی۔ ان کے سامنے حفیظ الدین کے علاج کے اخراجات پورے کرنے کیلئے کوئی اور متبادل تقریبا ناممکن تھا۔ تاہم وہ اپنی پوری کوشش کررہے تھے اور مختلف قسم کے آپشنز پر غور کررہے تھے۔

آخرکار اس کی بیوی نے بہت دوڑدھوپ کے بعد JPMCمیں دستیاب مفت PET-CT اسکین کے ادارے کا پتہ لگایا جو پیشنٹس ایڈ فاؤنڈیشن نے قائم کیاہے۔پاکستان میں یہ واحد ادارہ ہے جوPET-CT اسکیننگ کی مکمل سہولت مفت پیش کرتاہے۔

حفیظ اللہ ولد حکیم الدین نے بتایاJPMC”میں PET-CT”کی مفت سہولت پیشنٹس ایڈ فاؤنڈیشن (PAF)نے متعارف کروائی ہے اور اسی کی بدولت میں اپنے کینسر کا علاج شروع کرنے کے قابل ہوا جس سے میری صحت میں بہت عمدہ بہتری آئی ورنہ تو یہ میرے لئے ناممکن تھا”
پیشنٹس ایڈ فاؤنڈیشن (PAF)کے تعاون سے اس کو علاج شروع کرنے کا موقع ملا، جو غیر منافع بخش ہیلتھ منیجمنٹ کا ادارہ ہے جس نے اسے نہ صر ف امید دلائی بلکہ وہ بہت مطمئن بھی تھا کیونکہ اس ادارے نے نہ صرف مفت سہولت فراہم کی بلکہ اب وہ اچھی صحت اور بیماری سے پاک ہے۔ حفیظ الدین نے مزیدکہا کہ ادار ے کے بہت خیال رکھنے والے اسٹاف نے دوستانہ ماحول میں اس کی حوصلہ افزائی کی اور ہمیشہ پہلے ہی سے فالو اپ سیشنز کیلئے مطلع کیا۔اس کو کبھی احساس نہیں ہوا کہ وہ ایک سرکاری ہسپتال میں مفت علاج کروا رہا ہے۔

حفیظ الدین کے کل تینPET-CT سیشن ہوئے۔ پہلا سیشن 2019میں ہوا، یہ اس بات کا پتہ چلانے کیلئے تھا کہ کینسر کا کونسا اسٹیج ہے۔پھر دوسرا سیشن 2020میں ہوا اور یہ عبوری سیشن تھایہ دیکھنے کیلئے کہ علاج کتنا موثر ہے اور پھر آخر میں 2021میں حفیظ الدین کا تیسراPET-CT سیشن ہواجو بنیادی طور پر ایک فالو اپ اسکین تھا تاکہ علاج سے جسم کے رد عمل کی جانچ ہو اور یہ دریافت کیا جائے کہ بیماری کے دوبارہ حملہ آور ہونے کے کیا امکانات ہیں۔

پیشنٹس ایڈ فاؤنڈیشن( (PAFکی جانب سے JPMCمیں قائم مفت PET-CT کا ادارہ اپنے قیام سے اب تک حفیظ الدین جیسے 75,000مستحق مریضوں کو یہ مفت سہولت فراہم کرچکا ہے۔ اس وقت 3,000سے زیادہ مریض مفت PET-CT اسکیننگ کی سہولت حاصل کرنے کیلئے انتظار کی فہرست میں موجود ہیں جو اس کے خراجات بردشت نہیں کرسکتے تھے اگر ان کو یہ مدد اور تعاون حاصل نہ ہوتا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں