82

لاہور کالج فار وویمن یونیورسٹی،نارووال یونیورسٹی،فاطمہ جناح کالج کی طالبات کا پی ڈی ایم اے پنجاب کا مطالعاتی د ورہ

لاہور( ٹیوٹرپاکستان ) حکومت پنجاب کے مون سون بارشوں کے د وران کسی بھی قسم کی سیلابی صورت حال سے نمٹنے کے تما م تر اقدامات مکمل ہوتے ہیں۔

اس سلسلہ میں پی ڈی ایم اے میں قائم ماسٹر کنٹرول روم عوام کو چوبیس گھنٹے دریاؤں،ندی،نالوں میں پانی کی روانی اور ان میں اپ ڈاؤن بارے پرنٹ و الیکٹرانک میڈ یا کے ذریعے عوام کو با خبر رکھتا ہے جبکہ صوبہ بھر میں قائم وئیر ہاؤسز میں کسی بھی ہنگامی صورت حال میں سیلاب متاثرین کو ریسکیو کرنے اور ان کو کھانے پینے کی اشیاء پہنچاتے ہیں۔

اس امر کا اظہار آج محکمہ تعلقات عامہ پنجاب میں انٹرن شپ کے لئے آئی لاہور کالج فار وویمن یونیورسٹی،نارووال یونیورسٹی،فاطمہ جناح کالج کی انٹر نیشنل ریلیشنز اور ماس کمیونیکیشن کی طالبات کوپی ڈی ایم اے پنجاب کا مطالعاتی د ورہ کے موقع پر ڈائریکٹرفنانس پی ڈی ایم ا ے عمران مغل اور ڈائریکٹر کو آر ڈینیشن سہیل بابر نے بریفنگ کے دوران کیا۔

طالبات کو مذید بتایا گیا کہ پی ڈی ایم اے کو جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ کیاگیا ہے۔کسی بھی قسم کی بارشوں،سیلابی کیفیات، زلزوں و دیگر قدرتی آفات میں فوری ریلیف کے لئے اقدامات پی ڈی ایم اے کے ماتھے کا جھومر ہے۔اس محکمہ کی کارکردگی و اہمیت کا اعتراف ملکی و غیر ملکی سطح پر بر ملا کیا جاتا ہے۔

مختلف ممالک سے آئے وفود نے اپنے اپنے ملک میں اس طرز کے محکمہ کو بنانے کے لئے بھی عملی تر بیت اسی جگہ سے حاصل کی ہے۔ مون سون سیزن میں پی ڈی ایم اے کے ماسٹر کنٹرول روم میں تمام محکموں کے افسران اپنے اپنے محکموں سے بارشوں سے ہونے والے نقصانات اور ان پر ہونے والے عمل درآمد بارے رپورٹ حاصل کر کے ما سٹر کنٹرول روم کو بھیجتے ہیں تاکہ ا پ ڈیٹ ڈیٹا مرتب کیا جا سکے۔پی ڈی ایم اے کے ماسٹر کنٹرول روم میں تین ماہ تک فلڈ سیزن کی مانیٹرنگ کا عمل جاری رہتا ہے۔تمام اضلاع میں ڈ پٹی کمشنر کی سربراہی میں ڈیزاسٹر کمیٹیاں اپنے فرائض سر انجام دیتی ہیں۔ہر ضلع کی انتظامیہ چوبیس گھنٹے دریاؤں اور ندی نالوں میں پانی کے اتار چڑھاؤ بارے فوری رپورٹ جاری کرتی ہے۔ طالبات نے وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے پی ڈی ایم اے کومذید اپ ڈیٹ کرنے اور جدید بنانے پراظہار تحسین پیش کیا۔انہوں نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ حکومت پنجاب نے تمام محکموں میں اصلاحاتی عمل سے صوبہ کی نئی شناخت کروائی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں