50

مذاکرات کامیاب، مظاہرین کا دھرنا ختم کرنے اور میتوں کی تدفین کا اعلان

حکومت اور کوئٹہ میں دھرنا مظاہرین کے درمیان مذاکرات کامیاب ہوگئے، دھرنے کے شرکا نے دھرنا ختم کرنے اور میتوں کی تدفین کا اعلان کردیا۔

کوئٹہ دھرنے میں وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان، وفاقی وزیر علی زیدی، زلفی بخاری اور ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری کے ساتھ پہنچے تھے، انہوں نے دھرنے کے شرکا سے مذاکرات کیے جس کے بعد لواحقین نے 6 روز کے دھرنے کے بعد میتوں کی تدفین پر رضا مندی ظاہر کردی۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے اس موقع پر مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شہدا ایکشن کمیٹی سے تحریری معاہدہ ہوا۔

انہوں نے کہا کہ جن افسران کو ہٹانا تھا فیصلہ ہوچکا، بیرونی طاقتیں ملک میں فرقہ وارانہ فسادات کرانا چاہتی ہیں۔

وزیراعلیٰ بلوچستان نے دھرنے کے شرکا سے اظہار یکجہتی کیا اور تدفین کی رضامندی پر اظہار تشکر کیا۔

قاسم سوری کا مظاہرین سے خطاب میں کہنا تھا کہ جیسے ہی تدفین ہوتی ہے وزیراعظم عمران خان اور آرمی چیف کوئٹہ روانہ ہوں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں