104

پنجاب اسمبلی اجلاس:اج حکومتی اتحاد کے 215 ارکانِ اسمبلی جبکہ سنی اتحاد کونسل کے 98 ارکانِ اسمبلی نے حلف اٹھا لیا

پنجاب اسمبلی میں اراکین نے حلف اٹھا لیا ،اجلاس 2 گھنٹے کی تاخیر سے اسپیکر سبطین خان کی صدارت میں شروع ہوا۔

نمازِ جمعہ کے وقفے کے بعد اجلاس دوبارہ شروع ہوا تو نو منتخب اراکینِ پنجاب اسمبلی نے حلف اٹھایا۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی سبطین خان نے نو منختب اراکینِ اسمبلی سے حلف لیا۔

کتنے ارکان نے حلف اٹھایا؟
پنجاب اسمبلی میں آج حکومتی اتحاد کے 215 ارکانِ اسمبلی نے جبکہ سنی اتحاد کونسل کے 98 ارکانِ اسمبلی نے حلف اٹھایا ہے۔

نامزد وزیرِ اعلیٰ پنجاب مریم نواز بھی ایوان میں موجود تھیں جنہوں نے بطور رکنِ پنجاب اسمبلی حلف اٹھایا۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی سبطین خان کا کہنا تھا کہ اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کا انتخاب کل ہوگا، پنجاب اسمبلی کا اجلاس کل سہ پہر 4 بجے تک ملتوی کردیا گیا۔

ن لیگ، سنی اتحاد کونسل کی نعرے بازی
اجلاس شروع ہوا تو مسلم لیگ ن اور سنی اتحاد کونسل کے ارکان نے ایک دوسرے کے خلاف نعرے بازی کی۔

گھڑی چور کے نعرے
پنجاب اسمبلی کے اجلاس کے دوران مسلم لیگ ن کے ارکان نے ایوان میں گھڑی چور کے نعرے بھی لگائے۔

ارکینِ سنی اتحاد کونسل اور ن لیگ میں تلخ کلامی
پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں سنی اتحاد کونسل اور ن لیگ کے ارکان میں تلخ کلامی ہوئی ہے۔

سنی اتحاد کونسل کے ارکان کا کہنا تھا کہ ہمارے ارکان کو اندر نہیں آنے دیا جارہا۔

اس موقع پر ایوان میں مسلم لیگ ن کے 215 کے قریب، جبکہ سنی اتحاد کونسل کے 97 ارکان موجود تھے ۔

سنی اتحاد کونسل کے اراکین نے اسپیکر سبطین خان سے گفتگو کی کوشش کی تو انہوں نے انہیں بات کرنے سے روک دیا اور کہا کہ ابھی آپ نے حلف نہیں اٹھایا، ابھی آپ ممبر نہیں بنے ہیں، حلف لے لیں پھر آپ سب کی بات سنیں گے۔

اسپیکر سبطین خان نے کہا کہ ریزرو سیٹس الیکشن کمیشن نے رکھی ہوئی ہیں، ان کا فیصلہ ہونا ہے، ہم کتنے دن تک ایوان کو روک سکتے ہیں، حلف کا ہونا ضروری ہے اس کے بعد جو مرضی کریں۔

نو منتخب رکن رانا شہباز نے کہا کہ اسپیکر صاحب! ہم نے سنی اتحاد کونسل میں شمولیت اختیار کر لی ہے، ہمیں ہراساں کیا جارہا ہے۔

رکن سنی اتحاد کونسل رانا آفتاب نے کہا کہ ہمارے لوگوں کو اندر آنے نہیں دیا گیا، مخصوص جماعت کے لوگ مہمانوں کی گیلری میں بٹھا دیے گئے ہیں۔

اسپیکر سبطین خان نے کہا کہ رانا صاحب! آپ اپنے مہمانوں کی لسٹ دیں میں ان کو اندر بلاؤں گا، میاں اسلم اقبال کی رپورٹ منگواتا ہوں، وہ گرفتار ہیں تو ان کے پروڈکشن آڈر جاری کروں گا۔

رکنِ مسلم لیگ ن ملک احمد خان نے اسپیکر سے درخواست کی کہ آپ حلف کروائیں، اس کے بعد بات کریں گے۔

ملک محمد احمد خان نے مزید کہا کہ ہمارے مہمانوں کو اندر آنے اجازت نہیں دی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں