63

پنجاب سے باہر گندم کی مصنوعات لے جانے پر پابندی عائد

پنجاب سے خیبر پختونخوا گندم کی مصنوعات لے جانے پر پابندی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر راولپنڈی ملک زمان نے تمام فلور ملز مالکان کو اطلاع دی ہے اور ہدایت کی ہے کہ ضلع راولپنڈی سے باہر گندم‘ گندم کا آٹا‘ میدہ اور چوکر بھجوانے پر فوری طور پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ ڈی ایف سی کے مطابق یہ پابندی حکومت پنجاب کے حکم پر لگائی گئی ہے۔ خلاف ورزی کرنے والے فلور ملز مالکان کیخلاف فوجداری مقدمات قائم کئے جائینگے۔ راولپنڈی ڈویژن کے ضلع اٹک جس کی سرحدیں خیبر پختونخوا سے ملتی ہیں اُن پر محکمہ خوراک نے اپنی چیک پوسٹوں پر تعینات عملے کو حکم دیا ہے کہ وہ پنجاب سے آٹا‘ میدہ‘ سوجی‘ فائن‘ چوکر خیبر پختونخوا لے جانے والے ٹرکوں کو روکنے کا سلسلہ شروع کر دیں۔
اسی کے ساتھ اسلام آباد راولپنڈی ڈویژن اور گوجرانوالہ ڈویژن کے فلور ملز مالکان کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ آٹا‘ میدہ‘ سوجی‘ فائن کی کے پی کے کیلئے لوڈنگ فوری بند کر دیں۔
پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن نے اس فیصلے کی مذمت کی ہے۔ ایسوسی ایشن کی پنجاب برانچ کے سابق چیئرمین افتخار احمد مٹو نے جنگ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گندم کی سرکاری خریداری کے دنوں میں پنجاب سے باہر گندم لے جانے پر پابندی اعلانیہ یا غیر اعلانیہ لگائی جاتی رہی ہے مگر ماضی قریب میں کبھی بھی آٹا‘ میدہ‘ سوجی‘ فائن‘ چوکر پنجاب سے خیبر پختونخوا لے جانے پر پابندی عائد نہیں کی گئی۔
محکمہ خوراک پنجاب کو نہ جانے کس نے یہ ہدایت کی ہے یا مشورہ دیا ہے کہ جی ٹی روڈ (ایم ٹو) اور شیر گڑھ پل کے راستے کوہاٹ وغیرہ اور دوسرے کے پی کے علاقوں میں گندم کی مصنوعات نہ جانے دی جائیں۔ انہوں نے وزیراعظم شہباز شریف اور پنجاب کے منتخب وزیراعلیٰ حمزہ شہباز کو تجویز دی کہ وہ فلور ملز مالکان کو گندم کی خریداری میں رکاوٹ ڈالنے والے محکمہ خوراک‘ پولیس اور ضلعی انتظامیہ کے کارندوں کو سختی سے ہدایت کریں کہ وہ فلور ملز مالکان کو گندم کی خریداری میں رکاوٹ نہ ڈالیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں