21

یونیورسٹی آف ایجو کیشن وہاڑی کیمپس میں ہفتہ برائے انسداد بدعنوانی کے سلسلے میں آگاہی سیمینار کا انعقاد

یونیورسٹی آف ایجو کیشن وہاڑی کیمپس میں ہفتہ برائے انسداد بدعنوانی کے سلسلے میں آگاہی سیمینار کا انعقاد
سیمینار کے انعقاد کا مقصد نوجوان نسل کو کرپشن کے خلاف آگاہی اور سد باب کیلئے تیار کرنا ہے-ڈاکٹر اسرار احمد شیخ
وہاڑی(شفقت رمضان )حکومت پنجاب کی ہدایت پر یونیورسٹی آف ایجو کیشن وہاڑی کیمپس میں ہفتہ برائے انسداد بدعنوانی کے سلسلے میں آگاہی سیمینار کا انعقاد کیا گیا سیمینار کی صدارت پرنسپل یونیورسٹی آف ایجو کیشن وہاڑی کیمپس پروفیسر ڈاکٹر اسرار احمد شیخ نے کی۔ سیمینار میں اساتذہ اور طلبہ وطالبات کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ طلبہ وطالبات نے تقاریر اور خاکے پیش کرکے رشوت ستانی کے مضر اثرات سے آگاہ کیا۔پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر اسرار احمد شیخ نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انسداد بدعنوانی سیمینار کے انعقاد کا مقصد نوجوان نسل کو کرپشن کے خلاف آگاہی اور اسکے سد باب کیلئے تیار کرنا ہے انسداد کرپشن کیلئے ہمیں اپنے نوجوانوں کی کردار سازی کرنی چاہیے نوجوان خود احتسابی کے جذبے کو فروغ دیں نوجوان نسل بدعنوانی سے نفرت کرے اور انسداد کرپشن کیلئے زیادہ سے زیادہ لوگوں کو آگاہی بھی دے کہ معاشرے کا ہر فرد کرپشن کے خاتمہ کیلئے اپنا موثر کر دار ادا کرے تاکہ بطور قوم ہم کرپشن کا خاتمہ ممکن بنا سکیں۔ڈپٹی ڈائر یکٹر انفارمیشن میاں نعیم عاصم نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انسداد بدعنوانی کیلئے نوجوانوں میں شعور اور بیداری پیدا کر نا ہو گی کہ کسی بھی ایسی چیز کا حصہ نہ بنیں جس میں کرپٹ پریکٹسز ہوں نوجوان خود کو بھی کرپشن سے بچائیں اور کرپشن جو کہ ایک سلسلہ کی شکل میں چل رہی ہوتی ہے اس کو توڑنے کیلئے کر دار ادا کریں انہوں نے مزید کہا کہ کرپشن میں ملوث عناصر کا قلع قمع کرنا ہو گا تاکہ ہم اپنے معاشرے کو بدعنوانی کی لعنت سے محفوظ رکھ سکیں انہوں نے مزید کہا کہ نوجوانوں کو ہر ادارے سے کام کروانے کے طریقہ کار اور دستاویزات کی تیاری کا علم ہونا چاہیے کسی بھی ادارے سے کام لینے کے طریقہ کار اور دستاویزات کی تیاری کا علم نہ ہونا بھی رشوت کا باعث بنتا ہے نوجوان کو کرپشن کی نشاندہی اور اس کے خلاف آواز بلند کرنی چاہیے۔ رانا عباس علی نے کہا کہ بدعنوانی ایک ناسور ہے اس پر قابو پانے کیلئے عوام میں آگاہی دینا انتہائی ضرروری ہے نوجوان نسل مستقبل کا سرمایہ ہیں ان میں انسداد کرپشن آگاہی و شعور پیدا کرنا بھی انتہائی ضروری ہے تاکہ نوجوان نسل بدعنوانی کی روک تھام میں بڑھ چڑھ کر کردار ادا کریں۔جہانزیب یوسف ایڈووکیٹ نے کہا کہ معاشرے کو بدعنوانی سے پاک کرنے اور بہتر طرز حکمرانی کا نظریہ پھیلانے میں تعلیمی ادارے موثر کردار ادا کرسکتے ہیں بدعنوانی سے چھٹکارے کیلئے معاشرے کے تمام شعبوں بالخصوص تعلیمی اداروں کی حمایت نہایت ضروری ہے، طلباء کا کردار اس حوالے سے اہم ہے کیونکہ اگر نئی نسل یہ عہد کرلے کہ کرپشن نہیں کرنی تو کوئی بھی سرکاری عہدیدار کرپشن نہیں کرسکتا۔ سماجی رہنما نوشین ملک نے کہا کہ ہمیں نئی نسل سے بہت امیدیں وابستہ ہیں طلباء بھی خود احتسابی کے عمل کو مشعل راہ بنائیں اور دوسروں کو کرپشن کرنے سے منع کریں اور انکی نشاندہی کریں۔ ڈاکٹر عابد احمد نے کہا کہ ہمیں اپنی نوجوان نسل کی صحیح خطوط پر تربیت کرنی ہے تاکہ یہ عملی زندگی میں جب آئیں تو کسی قسم کی بدعنوانی میں ملوث نہ ہوں۔ اور اپنے ملک و قوم کی خدمت کو شعار بنائیں اس موقع پر ڈاکٹر سحر، فقیر احمد،ڈاکٹر عنبرین غنی اور دیگر اساتذہ بھی موجود تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں