65

ے سی سی اے پاکستان کی جانب نئے ممبران کا خیر مقدم،قومی تعمیر میں پیشہ ور اکاؤنٹنٹس کا اہم کردار ہے – اسد حمید خان

اے سی سی اے پاکستان کی جانب نئے ممبران کا خیر مقدم

اے سی سی اے (ایسوسی ایشن آف چارٹرڈ سرٹیفائیڈ اکاؤنٹنٹس) نے کراچی، لاہور اور اسلام آباد میں منعقدہ تقریبات میں نئے اے سی سی اے ممبران کاشاندار استقبال کیا۔

اے سی سی اے اپنے اراکین کوہمیشہ مستقبل کے بارے میں سوچنے اور چیلنجوں کو معاشرے کے فائدے کے مواقع میں تبدیل کرنے کے قابلبناتاہے۔ان تقریبات میں 700 سے زیادہ نئے شامل ہونے والے اے سی سی اے ممبران کا استقبال کیا گیا۔ان ایونٹس میں اے سی سی اے کے انعام یافتہ طلباء، نئے منظور شدہ،ایمپلائز اورایڈوکیسی ایوارڈز کے فاتحین کو بھی پہچاناگیا۔

اے سی سی اے پاکستان کے سربراہ اسد حمید خان نے نئے ممبران بشمول فیلوز اور اعلیٰ کامیابیاں حاصل کرنے والوں کا خیرمقدم کرتے ہوئے تقاریب کا آغاز کیااور کہا کہ”قومی تعمیر میں پیشہ ور اکاؤنٹنٹس کا اہم کردار ہے جوایک جامع اور پائیدار قومی اقتصادی ترقی کے لیے نہایت ضروری ہے“۔

نئے اراکین سے بات کرتے ہوئے اے سی سی اے کے صدرجوزف اوولوابی نے کہا کہ”اکاؤنٹنسی ایک تیزی سے بڑھتا ہوا پیشہ ہے اور اس پیشے میں آپ کی عالمی اسناد کا مطلب یہ ہے کہ آپ دنیا بھر کے سرکردہ ایمپلائز ان تمام 178 ممالک میں جہاں ہمارے اراکین فعال ہیں، پیش کیے جائیں گے“۔

لاہور میں تقریب کے مہمان خصوصی گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمان نے کہا کہ”پاکستان ایک بہتر کل کے لیے ACCA کی اسٹریٹجک کاروباری قیادت کا منتظر ہے“۔

ایک ویڈیو پیغام میں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ”میں یقینی طور پر پاکستان کی معیشت کو تبدیل کرنے اور دوبارہ تعمیر کرنے کی صلاحیت ہے۔ اکاؤنٹنسی کا پیشہ کسی بھی ملک کی معاشی ترقی میں مرکزی کردار ادا کرتا ہے۔ اکاؤنٹنٹس کو شفافیت کو آگے بڑھانے اور بدعنوانی کے خلاف عالمی جنگ میں سب سے آگے رہنے کے لیے منفرد طور پر رکھا گیا ہے۔“

نئے ممبران کی تقریب سے خطاب کرنے والے قابل ذکر رہنماؤں میں صدر اور سی ای او، یو مائیکرو فنانس بینک کبیر نقوی، سی ای اوTMUC فیصل مشتاق،بانی نیٹشیل گروپ محمد اظفر احسن،بانی ڈیسیبل HRMS فیصل قمر اور سی ای او سکینس سکول آف اکاؤنٹنسیساجد حسین شامل تھے۔

اس کے علاوہ سیڈ وینچرز نے اس سال کے شریک منتظمین کے طور پر اے سی سی اے میں شمولیت اختیار کی۔ بینک اسلامی اور کوکا کولا کمپنی اسٹریٹجک پارٹنرز تھے جبکہ پلاٹینم پارٹنرز میں SKANS سکول آف اکاؤنٹنسی، یو مائیکرو فنانس بینک، اور دی ملینیم یونیورسل کالج شامل تھے۔ ٹیلی نار گروپ Adroit Accountax/Obox اکاؤنٹنگ، نیشنل کلیئرنگ کمپنی آف پاکستان لمیٹڈ، نیشنل ڈیزاسٹر رسک مینجمنٹ فنڈ، Tabani’s School of Accountancy، PAC گروپ آف کالجز اور Mirchawala’s Hub of Accountancy نے گولڈ پارٹنرز کے طور پر تعاون کیا۔ TCM – سینٹرم میڈیا آؤٹ ریچ پارٹنر کے طور پر شامل ہوا اور KPMG اور نٹشیل گروپ نالج پارٹنر تھے۔

اس تقریب کو پاکستان بزنس کونسل (پی بی سی)، پاکستان اسٹاک ایکسچینج، اسپیشل ٹیکنالوجی زونز اتھارٹی، پاکستان سافٹ ویئر ہاؤسز ایسوسی ایشن، کے پی بورڈ آف انویسٹمنٹ اینڈ ٹریڈ، دی سینٹر آف ایکسی لینس ان ریسپانسبل بزنس (پی بی سی)، آئی سی ایم اے پاکستان،انکیوبیشن سینٹر، یونیورسل سروس فنڈ، پنجاب بورڈ آف انویسٹمنٹ اینڈ ٹریڈ، پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ، سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی، اور سی ایف اے سوسائٹی پاکستا ن کا تعاون بھی حاصل تھا۔

ACCA کے دنیا بھر میں 227,000 سے زائد مستقل اور 544,000 مستقبل کے ممبران موجودہیں جو وہ دنیا کے بہترین اور انتہائی قابل کا روباری پیشہ ور افراد میں شامل ہیں –
٭٭٭

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں